ذرا غور سے پڑھیں!

کاروباری مصروفیات کی بنا پر ہفتہ میں تین دن مجھے دہلی میں قیام کرنا ہو تا ہے اور اسکے بعد جیسے ہی میں گھر پہونچتا ہوں تو میرے مخلص، باہوش کرم فرما دوست و احباب میرا استقبال اس طرح کی خبروں، تجزیوں اور واقعات سے کرتے ہیں کہ جنکو سن کر مجھے معاشرے کے تئیں …

ہندو راشٹر ناقابل تسلیم(۲)

بحالات موجودہ ہندوستان (بھارت) کسی مخصوص فرقہ کی ریاست نہیں بن سکتا۔ اس کے ضمن میں ہم نے کچھ تمہیدی نوعیت کی باتیں گذشتہ شمارے میں تحریر کی تھیں۔ اس سلسلے کو آگے بڑھاتے ہوئے ہم مزید چند نکات پیش کرنا چاہتے ہیں جو حسب ذیل ہیں۔ ٭ ہندو راشٹر کا دعویٰ ایک بے دلیل …

نماز اور یوگا

روزنامہ ’انقلاب‘ نئی دہلی (وارانسی) مورخہ ۲۴؍فروری ۲۰۱۵ء کے مطابق: ’پانچ وقت کی نماز ایک بہترین یوگا‘۔بی جے پی کی سینیر لیڈر مرلی منوہر جوشی نے کہا کہ اگر پابندی سے یوگا کرایا جائے تو اس سے عصمت دری کے واقعات میں کمی واقع ہوگی اور نئی طرز فکر بھی جنم لے گی۔ نئی دہلی …

مسلم ممالک میں غیر مسلم اقلیتیں

خودنوشت عربی تحریر کا اُردو ترجمہ بعض لوگوں کے نزدیک ’اسلامی حکومت کے بارے میں غیر مسلم اقلیتوں کا رویہ‘ ایک بہت نازک موضوع ہے۔ جسکو چھیڑنا خطرے سے خالی نہیں کیونکہ اس سے مسلمانوں اور غیر مسلموں میں منافرت پیدا ہونے کا اندیشہ ہے اس لئے یہ لوگ اس موضوع پر کچھ کہتے ہوئے …

بنی اسرائیل کے جرائم اورقرآن مجید کی گواہی

اسلاف کی تابناک تاریخ، انبیاء علیہم السلام کا تسلسل،انعامات الٰہیہ کا لامتناہی سلسلہ،استخلاف فی الارض کی نعمت ان تمام کے مقابلہ میں بنی اسرائیل کا رویہ قتل انبیائ،بام عروج کو پہنچی ہوئی ماضی کی تاریخ کی محض یاد، اللہ کی جناب میں بغاوت و سرکشی، تمکن فی الارض ملنے کے بعد زمین میں فتنہ و …

یہ انسانیت کش جدید تعلیم و تہذیب

دہلی کے ایک ہی دن کے دو بڑے اخباروں میں انتہائی پڑھے لکھے لوگوں کے ذریعہ دل دہلانے والے جرائم کی خبر جدید تعلیم و تہذیب کے چہرہ بدنما حصہ کو اجاگر کر رہی ہے۔ پہلی خبر کے مطابق غازی آباد کے گوڑ گلوبل ولیج میں رہنے والے سافٹ ویئر انجینئر روہت شرما نے اپنی …

لہو کی مہندی

مکہ کے کافر اپنی طاقت سے مدینہ پر حملہ آور ہوئے تھے۔ بدر کی شکست وہ اب تک نہیں بھولے تھے اور انتقام کی آگ نے جیسے انہیں پاگل سا کر دیا تھا ازسر تاپالوہے میں لدے ہوئے ان کے بہادر نوجوان ہمیشہ کے لیے اسلام کے نام لیواؤں کا نام ونشان مٹانے آئے تھے۔ …

سیمی SIMI مرحوم۔۔انصاف پسندوں کو آواز دے رہی ہے

مرحوم سیمی ۲۷ ستمبر ۱۹۷۷کو علی گڑھ میں پیدا ہوئی تھی۔ کہتے ہیں کہ جس وقت اس کا جنم ہوا علی گڑھ یونیورسٹی میں پڑھنے اور پڑٖھانے والے لا دینیت کی چھتر چھایا میں پرورش پا رہے تھے۔ وہاں سے پڑھ کر نکلنے والا ہر شخص اپنے آپ کو بڑے فخر سے کمیونسٹ بتاتا تھا۔مسلمانوں …