لعنت کی ایک شکل اور ۔ مرد جسم فروشی

راجستھان ریاستی خواتین کمیشن نے پاک بھارت بین الاقوامی سرحد پر ضلع جسلمیر میں بڑھتی مرد جسم فروشی پر تشویش ظاہر کی ہے۔ کمیشن نے کہا کہ غیر ملکی سیاحوں کی وجہ سے یہ حالت پیدا ہو رہی ہے۔ کمیشن کے مطابق 12ویں جماعت کے ایک طالب علم نے خود کا طویل عرصہ سے استحصال ہونے کی اطلاع رہائشی قانون کمیشن کی صدر لاڈ کماری جین نے بتایا کہ جسلمیر واقع قلعہ کے بالائی علاقہ میں رہنے والے ایک کمیونٹی کے مرد اور عورت اسی پیشہ سے جڑے ہوتے ہیں۔ ان کا استحصال کرنے والوں میں غیر ملکی سیاحوں کی تعداد زیادہ ہے۔ محترمہ جین نے بتایا کہ جودھپور اودے پور اور جسلمیر کے کچھ ہوٹل اور ان کے کمرہ مرد و خواتین کی عصمت /جسم فروشی کے لئے استعمال ہوتے ہیں۔ سیاحت ، زمین کا کاروبار، کان کی صنعت کی وجہ سے اس دھندہ میں اضافہ ہو رہا ہے۔
(حالاتِ وطن 10/11/14)

Leave a comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *